Chitral Times

23rd August 2017

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

ذرا سوچئے………. تحریر۔ ہما حیات

August 11, 2017 at 9:59 pm

آج کل کے اس جدید دور میں تعلیم کی اہمیت اور ضرورت سے ہر کوئی واقف ہے۔ ایک قوم کی ترقی ، اس کی بنیادی تربیت اور اسکی آنے والی نسل کی سوچ کو مثبت بنانے تک سب میں ایک اہم کردار ادا کرتی ہے۔
اگر ہم دنیا کی ترقیافتہ ممالک پر غور کریں تو ایسے بہت سے ترقیافتہ ممالک ہیں جن کی ترقی کا دارو مدار زراعت یا پھر سرمایہ کاری پر نہیں ہوتا۔ یہ ممالک کپاس کے درخت سے تو آشناء ہیں لیکن تعلیم کی مدد سے ٹکنالوجی کا استعمال سیکھ کر ایسی جدید مشینیں ایجاد کر چکے ہیں جو کپاس کے مصنوعات کی تیاری میں معاون ثابت ہوتے ہیں۔ یہ تعیم ہی ہے جس نے انسان کے گرد جہالت کے اندھیروں کو مٹا کر انسانیت کے دئے منور کئے۔
لیکن بعض دفعہ حالات ایسے ہو جاتے ہیں کہ ان حالات میں تعلیم حاصل کرنا مشکل ہی نہیں بلکہ ناممکن ہو جاتاہے۔ ایسے میں بہت کم لوگ ہوتے ہیں جو آپ کا مسیحا بنتے ہیں ۔ ہمارے ارد گرد ایسے بہت سے ادارے ہیں جو انسانی خدمت کے لئے ہر وقت مصروف رہتے ہیں ۔ اس میں بعض ادارے ایسے ہیں جو فوری مدد کرتے ہیں جیسے کہیں نہر بنانی ہو ، کہیں پر حفاظتی دیوار یا پُل تعمیر کرنی ہو یا پھر سڑکوں کی ازسرنو تعمیر ہو۔
لیکن کچھ ادارے ایسے بھی ہیں جو نہ صرف آپ کا مسیحا بنتے ہیں بلکہ آپ کو بھی اس قابل بناتے ہیں کہ آپ بھی بُرے وقت میں دوسروں کے مسیحا بن سکیں۔ ایسے اداروں میں ” ہاشو فاونڈیشن ” کا نام قابل ذکر ہے۔ جس نے کئی زہین بچوں کو مویشی خانوں سے نکال کر دنیا کے بہترین سکولوں ، کالجوں اور یونیورسٹیوں سے آشناء کرایا۔ اور اس قوم کی بیٹیوں کو ایسی تربیت دی کہ وہ نہ صرف ایک ایسی قوم بن سکیں بلکہ آنے والی نسل کیلئے انکی گود بھی جدید درسگاہ بنا دی۔ ہم ان سب کے لئے Hashoo Foundation کا دل سے شکر گزار ہیں اور امید کرتے ہیں کہ مستقبل میں بھی ایسے ہی کام سرانجام دیگی۔ اور پھر را سوچئے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ یہ تعلیم ہی وہ واحد خزانہ ہے جسے آپ جتنا ہی خرچ کرینگے اُتنا ہی بڑھتا ہے۔

Translate »
error: Content is protected !!