Chitral Times

22nd August 2017

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

مدرسہ کی طالبہ نے دریائے چترال میں چھلانگ لگاکر خودکشی کرلی

August 2, 2017 at 8:31 pm

چترال ( محکم الدین ) موڑکہو کے گاؤں اُطول میں مدرسے کی طالبہ عرفانہ شاہین نے دریائے موڑکہو میں چھلانگ لگا کر خود کُشی کر لی ہے ۔ موڑکہو پو لیس کے مطابق متوفی کے والد نے رپورٹ درج کراتے ہوئے کہا ۔ کہ اُن کی بیٹی کو مرگی کی بیماری تھی ۔ گذشتہ روز وہ حسب معمول گھر سے مدرسہ چلی گئی ۔ لیکن مدرسہ نہ پہنچنے پر مدرسے کے معلم نے اُنہیں فون کرکے غیر حاضری کی وجہ پوچھی ۔ جس پرانہوں نے بتایا ۔ کہ اُن کی بیٹی مدرسہ جا چکی ہے ۔ اس دوران اُن کے ایک رشتہ دار نے آکر اُن کی دریاء میں چھلانگ لگانے کی اطلاع دی ۔ پولیس کے مطابق متوفی غیر شادی شدہ اور ایف اے پاس کر چکی تھی ۔ جس کے بعد اُنہیں مدرسے میں داخل کیا گیا تھا ۔ گذشتہ روز وہ مدرسہ آتی ہوئی راستے میں دریائے موڑکہو میں چھلانگ لگا کر خود کُشی کر لی ۔ جس کی لاش بعد آزان کوشٹ گاؤں کے سامنے دریا سے نکال لی گئی ۔ اور پوسٹ مارٹم کے بعد سپرد خاک کیا گیا ۔ چترال میں امسال خود کُشی کے واقعات میں غیر معمولی اضافہ ہوا ہے ۔ اور حالات نے تشویشناک صورت اختیار کر لی ہے ۔ جس کے تدارک کیلئے حکومت اور این جی اوز کو سنجیدہ اقدامات اُٹھانے کی اشد ضرورت ہے ۔ اگر اس طرف توجہ نہیں دی گئی ۔ تو نوجوان تعلیم یافتہ طبقے کی زندگیاں جذبات ، عدم برداشت اور ذہنی بیماریوں کی وجہ سے ختم ہوتی رہیں گی ۔ اور چترال کا معاشرہ کار آمد بچوں سے محروم ہو کر رہ جائے گا ۔

Translate »
error: Content is protected !!