Chitral Times

16th August 2017

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

اظہار مذمت

July 28, 2017 at 8:57 pm

شغور سے تعلق رکھنے والا شہزادہ حیدر الملک اور کریم آباد کے عوام کے مابین گزشتہ آٹھ سالوں سے معاہدہ چلا آرہا تھا کہ دونوں فریق کریم آباد کے چراگاہوں میں بکریاں نہیں چرائیں گے۔ اس سلسلے میں کریم آباد کے عوام نے اپنے ہزاروں کی تعداد میں بکریاں کوڑیوں کے دام فروخت کئے جن کی مالیت کرڑروں میں تھی۔ کریم آباد کے عوام نے یہ اقدام گزشتہ کئی سالوں سے علاقے میں آنے والے تباہ کن سیلاب کی وجہ سے کیا اور یہ بھی واضح رہے کہ بکریاں چرانے پر پابندی کے بعد گزشتہ سالوں کے دوران علاقے میں سیلاب نہیں آیا اور حیدر الملک سمیت علاقے کے عوام کی جان و مال ، زمین، سڑکیں اور پل محفوظ رہیں۔ 2015کے شدید سیلاب میں شغو ر اور آوی میں موصوف کے آبائی نوغور سمیت کئی سو ایکڑ زمین ، شغور بازار میں واقع ہوٹل، دکانیں اور مارکیٹ سیلاب سے تباہ ہوگئے ۔ موصوف کو یہ سب کچھ اچھی طرح یاد ہے کہ شاہی خاندان کے افراد چترال میں کرایہ کے مکان میں رہنے پر مجبور ہو گئے تھے۔ سیلاب آنے کے بہت سے اسباب ہوسکتے ہیں لیکن ایک اہم سبب گاوٗں کے اوپر واقع چراگاہوں میں ذیادہ تعداد میں بکریاں چرانا بھی ہے جس کی وجہ سے چترال کے انفاسٹرکچر کو شدید نقصان پہنچاہے، پورے تحصیل لٹکوہ کے عوام نے متفقہ طور پر بکریوں کی چراگاہوں میں چرانے پر پابندی عائد کی ہیں لیکن چند عناصر اس کی راہ میں رکاوٹ بنی ہوئی ہیں۔
چند دن پہلے شہزادہ حیدر الملک رات کی تاریکی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے اور معاہدے کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اپنے زرخرید گوجروں کو لیکر 200 سے زائد بکریاں کریم آباد میں عوامی چراگاہ میں پہنچایا ،اطلاع ملتے ہی علاقے کے عمائدین نے سرکارکو درخواست کی اور موصوف کے ساتھ شغور تھانہ میں دو سے تین بار مذاکرات کیے، نہ ماننے پر عمائدین نے مجسٹریٹ میں درخواست جمع کی اور مجسٹریٹ نے کمیشن مقرر کیا اور اکرام صاحب AC Chitral کے دفتر میں تین بار نشست ہوئی لیکن موصوف ٹس سے مس نہ ہوا، مجسٹریٹ نے 145لگا دیا پھر بھی موصوف قانون کی دھجیاں اڑا تے ہوئے اس کی مخالفت کی۔ عوام تمام بکریوں کوگوجر سمیت پر امن اور باحفاظت طریقے سےSHO Shoghoreکی نگرانی میں شغور پہنچاکر پولیس کے حوالے کیا۔ موصوف پرُامن لوگوں پر جھوٹی FIR جمیل گوجر کی ایما ء پر درج کرکے 23سے زائد بے گناہ افراد کو گرفتار کروایا ہے جن میں ممبر ڈسٹرکٹ کونسل محمد یعقوب، سابق ضلع نائب ناظم سلطان شاہ، سابق جنرل سیکرٹری پی ٹی آئی چترال اسرار الدین صبور، ناظم علی مراد شاہ، ممبر جعفریات اور ممبر حضرت علی خان شامل ہیں ۔
عوام کریم آباد ضلع انتظامیہ کو متنبہ کرتی ہے کہ فرد واحد جو کہ ایک سرکاری آفسر ہے کی ایما ء پر کریم آباد کے عمائدین پر جھوٹی FIRکو ختم کردیا جائے اور گرفتار بے گناہ افراد کو فوراً رہا کیاجائے ، اور کریم آباد کے عمائدین کو فوری طور پر رہا کیا جائے ورنہ علاقے کے عوام راست اقدام اٹھانے پر مجور ہونگے ۔ ہم ڈی سی چترال کے جانب دارانہ رویے کی بھی بھر پور مذمت کرتے ہیں کہ انھوں نے اس تمام معاملے میں جانب داری کا مظاہرہ کیا ۔
فقط محمد علی ممبر تحصیل کونسل چترال
برائے اہالیاں کریم آباد

Translate »
error: Content is protected !!