Chitral Times

16th August 2017

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

جاگیر بسین کو ٹاون کمیٹی کا درجہ دیا جارہاہے ۔ڈپٹی کمشنر گلگت محمد حمزا سالک

July 21, 2017 at 7:54 pm

جاگیر بسین کو جگلوٹ،دنیور کی طرح ٹاون کمیٹی کا درجہ دیا جارہاہے ۔۔ڈپٹی کمشنر گلگت محمد حمزا سالک کی کھلی کچہری سے خطاب
گلگت( چترال ٹائمز رپورٹ ) جمعہ کے روز ڈپٹی کمشنر اور اسسٹنٹ کمشنر کی طرف سے جاگیر بسین میں کھلی کچہری کا انعقاد کیا گیا۔ جاگیر بسین گرلز ہائی سکول میں عوامی مسائل کے حل کیلئے کھلی کچہری کا انعقاد ک کھلی کچہری میں عمائدین اور شرکاء کی جانب سے اٹھائے گئے سوالات کا جواب دیتے ہوئے ڈپٹی کمشنرگلگت محمد حمزا سالک نے کہا کہ جاگیر بسین کو جگلوٹ،دنیور کی طرح ٹاون کمیٹی کا درجہ دیا جارہاہے جہاں پر کمیونٹی کے زریعے ٹاون کمیٹی شہری مسائل اور صفائی کے نظام کو بہتر انداز میں چلائے گی جس سے جاگیر بسین کے مسائل انکے گھر کی دہلیز میں حل ہونگے اور جاگیر بسین میں گرانفروشی پر قابو پانے کیلئے مجسٹریٹس کے زریعے چیک اینڈ بیلنس کا نظام مربوط بنیادوں پر فعال کیا گیاجسکی نگرانی اسسٹنٹ کمشنر گلگت بہترا نداز میں کر رہے ہیں۔علاوہ ازیں کھلی کچہری میں شریک عمائدین کے سوالات لا جوان دیتے ہوئے اسسٹنٹ کمشنر گلگت نوید احمد نے کہا کہ مقامی انتظامیہ عوام کے بنیادی مسائل کے حل کیلئے عملی اقدامات کر رہی ہے اس کی مثال جاگیر بسین میں کھلی کچہری کا انعقاد ہے جاگیر بسین میں لوڈ شیڈنگ ،ترقیاتی منصوبوں کی بروقت تکمیل،معاویضے لیکر رابطہ سڑکوں کیلئے زمین نہ دینے والوں اور غیر قانونی طور پر سرکاری اراضی کو اپنے نام پر انتقال کرانے والوں کے خلاف کاروائی سخت کاروائی کیلئے عوام مقامی انتظامیہ کے ساتھ تعاون کریں تاکہ عوامی مسائل کے حل میں مدد مل سکے مقامی انتظامیہ گلگت انتظامیہ کی جانب سے جاگیر بسین میں کھلی کچہری کا انعقاد ۔علاقہ مکینوں نے کھلی کچہر ی میں پر اعتماد انداز میں درپیش مسائل کے حل کیلئے سوال جواب اورا پنے مسائل پیش کئے ۔ جس میں عمائدین اور دیگر علاقہ مکیوں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی ۔کھلی کچہری میں ہر خاص و عام نے انتظامیہ کے زمہ داران کے سامنے پنے مسائل پیش کئے جس میں سے بیشتر مسائل کے حوالے سے ڈپٹی کمشنر محمد حمزہ سالک نے موقع پر ہی احکامات جاری کرتے ہوئے متعلقہ اداروں کو دو دن میں رپورٹ کرنیکا حکم جاری کر دیا ۔انہوں نے علاقہ مکینوں کی پر زورپر زور مطالبے پر اگلے ترقیاتی منصوبے میں جاگیر بسین میں نیابت دفتر کے قائم کرنے کا عندیہ دیا جبکہ ہسپتال میں ایمرجنسی ڈیٹی کے سلسلے میں سیکریٹری ہیلتھ کو سفارشات بجھوانے کی یقین دہانی کرائی ۔کھلی کچہری میں عوامی حلقوں کیجانب سے پلے گراونڈ کا قیام اور جاگیر بسین کو میونسپل ایرئے میں شامل کرنے ک بھی مطالبہ سامنے آیا جس پر ڈپٹی کمشنر نے متعلقہ حکام سے بات کرکے جواب دینے کی یقین دہانی کرائی ۔کھلی کچہری کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے اسسٹنٹ کمشنر گلگت نویداحمد نے کہا کہ ہم نے تجاوزات کے خلاف بلا تفریق ایک آپریشن شروع کر رکھا ہے ہم علاقہ مکینوں سے ہیں کہ وہ تجاوزات کنندگان کے نام ہمارے سامنے لائیں ہم سب ملکر انکے خلاف کاروائی کریں گے ۔بجلی لوڈ شیدنگ کے حوالے سے ہم نے ولیج سطح پر کمیٹی تشکیل دے رکھی ہے اور ہم انشاء اللہ ان کمیٹیوں کے تعاون سے بجلی چوری کی روک تھام ،پیلے بلبوں کا استعمال پر کنٹرول کر کے بجلی کی کمی کو پورا کریں گے تمام واٹر سپلائی اور بجلی کے دفاتر میں سٹاف کی عدم موجودگی کی صورت میں اپنی شکایات ہمارے کنڑول روم میں درج کراسکتے ہیں جس پہ زمہ دار ان کے خلاف فوری کاروائی کی جائے گی ۔کھلی کچہری میں موجودشرکاء اور عمائدین کا کہنا تھا کہ وہ چیف سیکریٹری گلگت بلتستاناور ضلعی انتظامیہ کے تہہ دل سے شکریہ ادا کرتے ہیں کہ انہوں نے تاریخ میں پہلی دفعہ انکے مسائل انکے گھر کی دہلیز پر سنے گئے ہیں موجودہ گلگت انتظامیہ لائق تحسین ہے مہ انتظامیہ کے نمائندے ہر وقت علاقے کی بہتری کیلئے مصروف عمل نظر آتے ہیں اسسٹنٹ کمشنر گلگت نوید احمد کی روزانہ کی بنیادوں پر علاقے میں بہت بتری آئی ہے اور واضح تبدیلی کے آثار ہر طرف نمایاں نظر آتے ہیں ان کا کہنا تھا کہ ہم پر امید ہے کہ ایسی کھلی کچہریوں کا انعقاد مستقبل میں جاری رہے گا تاکہ ہر خاص و عام کو اپنے مسائل حکام بالا تک پہنچانے کا موقع فراہم کیا جاتا رہے گا۔۔

Translate »
error: Content is protected !!