Chitral Times

23rd August 2017

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

قدرتی آفات کی وجہ سے مسلسل نقصان پہنچ رہا ہے ۔ متاثرہ افراد امداد سے محروم ہیں۔۔ضلع ناظم

July 18, 2017 at 9:33 pm

چترال کو قدرتی آفات کی وجہ سے مسلسل نقصان پہنچ رہا ہے ۔ لیکن ریلیف ایکٹ میں سقم ہونے کی وجہ سے کئی متاثرہ افراد امداد سے محروم رہتے ہیں ۔۔ضلع ناظم

چترال ( محکم الدین ) ضلع ناظم چترال حاجی مغفرت شاہ نے کہا ہے ۔ کہ چترال کو قدرتی آفات کی وجہ سے مسلسل نقصان پہنچ رہا ہے ۔ لیکن ریلیف ایکٹ میں سقم ہونے کی وجہ سے کئی متاثرہ افراد امداد سے محروم رہتے ہیں ۔ لیکن قانون کے دائرے سے نکل کر اُن مصیبت زدہ لوگوں کی مدد کرنا ضلعی حکومت کیلئے ممکن نہیں ۔ اس لئے چترال کے تناظر میں اس میں کئی تبدیلیوں کی ضرورت ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز ڈسٹرکٹ گورنمنٹ چترال ، بارسلونا پروونشل کونسل اور جاد فاؤنڈیشن کے اشتراک سے چترال کے ناظمین ، اور مردو خوتین کونسلرز کیلئے یوتھ ڈویلپمنٹ اینڈ لیڈر شپ کے حوالے سے منعقدہ پانچ روزہ ورکشاپ کے اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ ڈسٹرکٹ ڈیزاسٹر منیجمنٹ آفیسر چترال فداء الکریم جاد فاونڈیشن کے چیف ایگزیکٹیو سید حریر شاہ اور مردوخواتین و اقلیتی کونسلروں کی بڑی تعداد اس موقع پر موجود تھی ۔ ضلع ناظم نے کہا ۔ کہ چترال کی 90فیصد آبادی کا انحصار زراعت اور لائیو سٹاک پر ہے ۔ اگر یہ شعبے متاثر ہوں گے ۔ تو چترال کے لوگوں کو یقینی طور پر بڑے مسائل کا سامنا کرنا پڑے گا ۔ اس لئے سیلاب کی وجہ سے زرعی زمینات ، لائیو سٹاک کو نقصان پہنچنے کی صورت میں متاثرین کی مدد انتہائی ضروری ہے ۔ انہوں کونسلر ز کو مخاطب کرتے ہوئے کہا ۔ کہ جس لولی لنگڑی بلدیاتی سسٹم میں آپ کام کررہے ہیں ۔ اُس کیلئے آپ شاباش کے مستحق ہیں ۔ موجودہ حکومت نے جو دعوی کیا ۔ اور اُس کے نتیجے میں جو لوگ الیکشن میں کامیاب ہو کر آئے ہیں ، انتہائی مشکل میں ہیں ۔ اس کے باوجود یہ کہنا بے جا نہ ہوگا ۔ کہ ایک سسٹم موجود ہے ۔ جس میں ویلج ناظمیں اور کونسلر حکمت عملی کے تحت عوام کے چھوٹے مسائل حل کر سکتے ہیں ۔ انہوں کہا کہ ویلج کونسل کے انتہائی محدود فنڈ سے اگر آپ کوئی منصوبہ نہیں کرسکتے ۔ تو ٹینٹ سروس کے سامان خرید کر لوگوں کی غمی اور خوشی کے موقع پر اُنہیں یہ سہولت دے کر اُن کی ہمدردیاں حاصل کر سکتے ہیں ۔ضلع ناظم نے کہا ۔ کہ چترال میں ایک بڑا پروگرام قائم ہونے والا ہے ۔ جس میں تمام بلدیاتی نمایندگان اپنے علاقوں کے مسائل حل کرنے کے قابل ہوں گے ۔ انہوں نے کہا ۔ یہ بات نہایت اہم ہے ۔ کہ چترال جیسے ایک ضلع نے بارسلونا سے ایم او یو سائن کیا ہے ۔ اور یہ چترال کی تعمیر و ترقی کی خاطر کیا جارہا ہے ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ نوجوان قوم کا مستقبل ہیں اور ہم چاہتے ہیں ۔ کہ آیندہ ذمہ داری اُن کے سپرد کی جائے ۔ انہوں نے کونسلرز پر زور دیا ۔ کہ وہ میونسپل سروسز پر توجہ دیں ۔ اس موقع پر ڈی ڈی ایم او فداء الکریم نے خطاب کرتے ہوئے کہا ۔ کہ کو نسلر ز اور یو تھ کی ذمہ داریاں آفات کے موقعوں پر مزید بڑھ جاتی ہیں ۔ آپ حکومت کے دست بازو ہیں ۔ اور آپ کے بھر پور تعاون سے ہی حکومت کسی مشکل سے نکلنے سے کامیاب ہو سکتی ہے ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ عالمی حدت میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے ۔ گلیشئرز کے پگھلاؤ میں بہت تیزی آئی ہے۔ جبکہ دوسری طرف چراگاہوں کا استعمال بھی نہایت غیر دانشمندانہ ہے ۔ جس کی وجہ سے چترال سیلاب کی تباہ کاریوں سے دوچار ہے ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ بہت سارے مقامات پر دریاء اور ندی نالوں کے دھانے پر جنگلات لگا کر پانی کی راہ میں رکاؤٹ پیدا کئے جاتے ہیں ۔ اور سیلاب آنے پر پورا گاؤں مشکلات کا شکار ہو جاتا ہے ۔ جن کے تدارک کی اشد ضرورت ہے ۔ وکشاپ سے چیف اگزیکٹیو جاد فاونڈیشن سید حریر شاہ نے خطاب کرتے ہوئے تمام مہمانوں اور کونسلرز کا شکریہ ادا کیا ۔ جبکہ پروگرام کے منتظمین شکیلہ اور عرفان عزیز نے پانچ روزہ پروگرام کے مختلف سیشن پر روشنی ڈالی ۔ اور کہا ۔ کہ رضاکارانہ خدمات ، کمیونیکیشن ، عالمی شہری کی ذمہ داریاں ، بلدیاتی نظام کی اہمیت ، انسانی حقوق ، ماحولیات ، مذہبی و ثقافتی ہم آہنگی ، امن و امان ، لیڈر کی خصوصیات اور ادارتی ترقی ، لوکل گورنمنٹ سسٹم ، فرسٹ ایڈ اور ڈیزاسٹر رسک ریڈکشن ورکشاپ کے مو ضوعات رہے ۔ اور شراکاء اپنی یو سی سطح پر بطور ٹرینر کمیونٹی کو موبلائز کرنے اور آگہی دینے میں کردار ادا کریں گے ۔

Translate »
error: Content is protected !!