Chitral Times

22nd August 2017

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

گاڑی حادثے میں لاپتہ ایک اور شخص کی لاش نکال لی گئی ، وزیر اعلیٰ کی طرف سے اظہار تعزیت

July 17, 2017 at 9:30 pm

گاڑی حادثے میں لاپتہ ایک اور شخص کی لاش دریا سے نکال لی گئی ، وزیر اعلیٰ کی طرف سے اظہار تعزیت
چترال ( نمائندہ چترال ٹائمز )آرکاری سے چترال آتے ہوئے گاڑی حادثے میں لاپتہ ایک اور شخص کی لاش جوٹی لشٹ کے مقام سے دریا سے برآمد کرکے آبائی گاوں روانہ کردیاگیا۔ اس سے قبل حادثے کے مقام پر امدادی کارروائیوں میں چترال سکاؤٹس ،چترال پولیس،چترال بارڈرپولیس ،آغاخان ایجنسی فارہیبٹاٹ اورمقامی رضاکاروں نے حصہ لیاجبکہ امدای کارروائیوں کی نگرانی کمانڈنٹ چترال سکاوٹس کرنل نظام الدین شاہ،ڈی پی او چترال سیداکبرعلی شاہ ،اورضلعی انتظامیہ کی طرف سے اسسٹنٹ کمشنرچترال عبدالاکرم جبکہ آغاخان ہیبٹاٹ کی طرف سے آرپی ایم محمدکرم نے کی۔ مذیدلاشوں کی تلاش کاسلسلہ جاری ہے اسسٹنٹ کمشنر چترال عبدالاکرم نے میڈیاسے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ لاشوں کی تلاش کے حوالے سے تمام سہولیات فراہم کی جائیں گی ۔ریسکیو1122کے اہلکاروں کے علاوہ ارندوسے تیراک کاانتظام کیاگیاہے جواپنے تجربات کے مطابق لاشوں کی برآمدگی کے حوالے سے مختلف مقامات پرتلاش کریں گے ۔ حادثے میں زخمی ہونے والے نائب ناظم آرکاری محمدولی نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا ہے ۔ کہ لاشوں کو باز یاب کرنے میں اُن کی مدد کی جائے ، نیز جان بحق ہونے والوں کو معاوضہ دیا جائے ۔ انہوں نے کہا ۔ کہ جان بحق اور زخمی ہونے والے افراد انتہائی پسماندہ علاقے سے تعلق رکھتے ہیں ۔ اور اُن میں خاندان کے ایسے افراد شامل ہیں ۔ جو واحد کفیل ہیں ۔ اب اُن متاثرین کیلئے زندگی گزارنا انتہائی مشکل ہو گیا ہے ۔کہ انہوں نے کہا کہ دریاء میں گرنے کے بعد اُنہیں معلوم ہوا ،کہ وہ حادثے کا شکار ہوگئے ہیں ۔ تاہم راہگیروں اور مقامی افراد نے اُن کی جان بچانے میں اہم کردار ادا کیا ۔ درین اثنا ایم پی اے چترال سیلم خان ،کمانڈنٹ چترال سکاؤٹس کرنل نظام الدین شاہ ،ڈی پی او چترال سیداکبرعلی شاہ ،اسسٹنٹ کمشنر چترال عبدالاکرم نے ڈی ایچ کیوہسپتال میں زخمیوں کی عیادت کی اوربھرپورہمدردی کااظہارکیا۔واضح رہے کہ مذکورہ جگے میں یہ ایک سال کے اندریہ دوسرا بڑاحادثہ ہے جس میں اب تک 15افراد خراب سڑک کے باعث حادثے کاشکارہوکرجابحق ہوئے۔لیکن متعلقہ ادارے کی کان میں جوں تک نہیں رینگتی ، اور نہ اس خطرناک مقام پر دریاء سائڈ پر جنگلے تعمیر کرنے کی زحمت کی جاتی ہے ۔
دریں وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا پرویز خٹک نے چترال میں مسافر گاڑی دریا میں گرنے کے دلخراش واقعے پر گہرے افسوس کا اظہار کیا ہے جس میں متعدد افراد جاں بحق اور زخمی ہوئے ہیں۔ وزیراعلیٰ نے واقعے کے فوری بعد ضلعی انتظامیہ سے رابطہ کیا اور فوری ریسکیو کاروائی کی ہدایت کی وزیراعلیٰ نے جاں بحق افراد کی مغفرت اور زخمیوں کی جلد صحتیابی کی دعا کی نیز متاثرۃ خاندانوں سے دلی ہمدردی کا اظہار کیا۔ انہوں نے حادثہ کی اطلاع ملنے پر بر وقت ریسکیوٹیم اور غوطہ خور بھیجنے اور مقامی ہسپتال میں مناسب طبی انتظامات پر ڈپٹی کمشنر چترال شہاب حامد یوسفزئی کی کارکردگی کو سراہا جسکی بدولت متعدد افراد کی جانیں بچا لی گئیں۔ انہوں نے دورافتادہ پہاڑی علاقوں میں اسطرح کے اندوہناک حادثات کی روک تھام کیلئے موثر حفاظتی انتظامات اور مقامی آگہی مہم چلانے کی ضرورت پر زور دیا۔

Translate »
error: Content is protected !!