Chitral Times

21st August 2017

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

محلہ پرانا سبزی منڈی کے مکین پانی کے بوند بوند کو ترسنے لگے۔

May 30, 2017 at 3:05 am

ہم اہالیا ن پرانا سبزی منڈی اپ کے موقر جریدے کی وساطت سے یہ بات حکام بالا تک پہنچانا چاہتے ہیں کہ ہم اہالیان سبزی منڈی اور الخدمت فاونڈیشن چترال مل کر چند سال پہلے مشترکہ طور پر اپنی مدد آپ کے تحت انگار عون کا پائپ لائن محلہ سبزی منڈی تک پہنچائے تھے ۔ جس کے لیے کمیو نٹی والوں نے فی گھرانہ کم و بیش 15000/-روپے جمع کئے تھے اور میٹریل کی زمہ داری الخدمت فاونڈیشن کی تھی جس میں پائپ وغیرہ شامل تھی اور مزدوری یعنی کھودائی وغیرہ کمیونٹی والوں کی زمے تھی۔ مگر ایک سال سے بھی کم عرصے کے دوران WSU والوں نے اپنی مرضی اور زبردستی کی بنیاد پر ہمارے پائپ لائین سے غیر قانونی کنکشن دینے شروغ کیے جو کہ ابھی تک جاری ہے۔جبکہ شروغ میں کمیونٹی، الخدمت اور WSU کے درمیاں یہ معاہدہ ہوا تھا کہ اس لائین سے کوئی بھی فریق اپنی مرضی سے کنکشن نہیں دے سکے گا۔ اب صورت حال یہ ہے کہ لایئن میں پانی ہی نہیں اور عوام خاص کر خواتین ماہ رمضان میں بالٹیاں لے کر سارا دن پانی کی تلاش میں سرگردان رہتی ہیں۔
ہم جناب ڈپٹی کمشنر چترال، ڈسٹرکٹ ناظم چترال، کمانڈنٹ چترال سکاوٹس، اور یو سی ناظمین سے مداخلت کی اپیل کرتے ہیں اور مطالبہ کر تے ہیں کہ WSUوالوں سے ان کے دیے ہوئے غیر قانونی کنکشن کو فورا ختم کر کے ہمارا پانی بحا ل کرے ورنہ ہم انتہائی قدم اٹھانے پر مجبور ہو جایئنگے جس کی تمام تر زمہ داری WSU چترال کے زمہ داران پر عائد ہو گی۔

فقط
اہالیان پرانا سبزی منڈی چترال

Translate »
error: Content is protected !!