Chitral Times

16th August 2017

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

یونیورسٹیوں کو رجسٹرڈ ورکرز کے بچو ں کی تعلیمی وظائف کیلئے ساڑھے 4 کروڑ روپے کی فراہمی ۔

May 12, 2017 at 9:30 pm

پشاور ( چترال ٹائمز رپورٹ ) خیبر پختونخوا کی وزیر محنت اور معدنی ترقی انیسہ زیب طاہر خیلی نے صوبے کے رجسٹرڈ محنت کشوں کے بچوں کے تعلیمی اخراجات کیلئے متعدد تعلیمی اداروں کو تعلیمی وظائف کی مد میں 4کروڑ 50لاکھ روپے فراہم کئے ۔ان وظائف سے تقریباً 264طلباء مستفید ہونگے جس میں انکی ٹیوشن فیس، ہاسٹل، ٹرانسپورٹ اور خوراک سمیت دیگر اخراجات شامل ہیں۔اس سلسلے میں جمعہ کے روز وزیر محنت انیسہ زیب طاہر خیلی کے دفتر میں ایک تقریب منعقد ہوئی جس میں ڈائریکٹر ایجوکیشن ورکرز ویلفیر بورڈ کرنل( ریٹائرڈ) رضا محمد، ڈائریکٹر فنانس اعظم خان ، ڈپٹی دائریکٹر سکالر شپس ساجد انعام، ممبر خیبر پختونخوا ورکرز ویلفےئر بورڈ، فقیر حسین لالا اور یونیورسٹیوں کے نمائندوں نے شرکت کی۔ صوبائی وزیر نے اس موقع پر یونیورسٹیوں کے نمائندوں کو رجسٹرڈ محنت کشوں کے بچوں کے تعلیمی وظائف کے چیک حوالے کیے ۔ واضح رہے کہ ملک کے اعلٰی تعلیمی اداروں میں محنت کشوں کے بچوں کو صوبائی حکومت ورکرز ویلفےئر بورڈ کے ذریعے سرکاری وظائف پر انجینئرنگ ، منیجمنٹ سائنسز اور دیگر شعبوں میں گریجویشن اور پوسٹ گریجویشن تک تعلیم دلوا رہی ہے ۔ اس موقع پر صوبائی وزیر نے یقین دلایا کہ جن تعلیمی اداروں کے بقایا جات رہتے ہیں انھیں ایک مہینے کے اندر حوالہ کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ سکالر شپس کی مد میں وفاقی ادارے ورکرز ویلفےئرفنڈ سے جب بھی یہ رقم ملے تو ہم اسے جلد یونیورسٹیوں کو فراہم کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ محنت کش ہمارے ملک اور معاشرے کی ترقی کیلئے انتہائی اہم کردار اد کر رہے ہیں اور ان کے بچوں کو معیاری تعلیم کی فراہمی ہماری ذمہ داری ہے لہٰذا ہماری کوشش ہے کہ محنت کشوں کے بچوں کو ہر شعبہ میں معیاری تعلیم فراہم کی جائے اور یہ بچے بھی ہمارے معاشرے کے روشن ستارے بن جائیں۔ اس موقع پر یونیورسٹیوں کے نمائندوں نے صوبائی وزیر کی کوششوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ ان کی کوششوں سے نہ صرف محنت کشوں کے بچے معیاری تعلیم حاصل کر رہے ہیں بلکہ تعلیمی اداروں کے بقایا جات بھی وقت پر مل رہے ہیں ۔ اس موقع پر ڈپٹی ڈائریکٹر سکالرشپس ورکرز ویلفےئر بورڈ ساجد انعام نے کہا کہ صوبائی وزیر محنت انیسہ زیب طاہر خیلی کے عرصہ وزارت میں ملک بھر کے تعلیمی اداروں کو محنت کشوں کے بچوں کے تعلیمی وظائف کی مد میں تقریباً 65 کروڑ روپے فراہم کئے گئے ہیں اور اس خطیر رقم سے صوبے بھر کی معیاری درسگاہوں میں ان بچوں کو میڈیکل ، انجینئرنگ اور دیگر عصری علوم کی فراہمی کا سلسلہ جاری ہے۔

Translate »
error: Content is protected !!