Chitral Times

16th August 2017

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

علماء کرام، ڈسٹرکٹ گورنمنٹ ، اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی بر وقت کاروائی سے حالات پر احسن طریقہ سے قابو پا لیا گیا۔۔ضلع ناظم

May 8, 2017 at 9:37 am

چترال(نمائندہ چترال ٹائمز) ضلع ناظم چترال حاجی مغفرت شاہ نے امیر جمیعت علماء اسلام ف مولانا عبد الرحمٰن قریشی،تحصیل نائب ناظم خان حیات اللہ خان،مولانا عبد الشکور،مفتی محمود الحسن،مولانا حسین احمد اور امیر جماعت اسلامی مولانا جمشید احمد کی معیت میں پیر کے روزچترال پریس کلب میں ایک پرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ گزشتہ جمعہ کے روز شاہی مسجد چترال میں دوران جمعہ جو ناخوشگوار واقعہ پیش آیا علماء کرام، سیکورٹی فورسز، ڈسٹرکٹ گورنمنٹ اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی بر وقت کاروائی سے حالات پر احسن طریقہ سے قابو پا لیا گیا جس پر تمام ادارے قابل تحسین ہیں۔اُنہوں نے کہا کہ ملعون کے خلاف زیر دفعات 295 Cاور 6/7ATAگستاخ رسالت اور انسداد دہشتگردی کے تحت مقدمہ درج کرکے گرفتار کر لیا گیا ہے۔

خدا کا شکر ہے ۔ کہ دینی جماعتوں ، علماء اور ڈسٹرکٹ گورنمنٹ کی کوششوں سے مجرم کو سزا دینے کیلئے قانون کے مطابق تمام درکار مواد کو جمع کیا گیا ۔ اور اُس کے خلاف توہین رسالت و دہشت گردی قانون کے مطابق سزا دینے کیلئے مقدمہ درج کر لیا گیا ہے ۔ اس حوالے سے چھ قوی شہادتیں جج کے سامنے ریکارڈ کی گئی ہیں ۔ ملزم کے خلاف پیر کے روزمقامی عدالت میں چھ قوی شہادتین گرازری گئی ہیں۔اُنہوں نے کہا کہ اب عوام کی نظریں عدالت پر ہیں امید ہے کہ مبینہ ملعون سزا سے نہیں بچ سکے گا۔اُنہوں نے کہا کہ اس واقعے پر عوام کا رد عمل قدرتی امر تھا مگر ہمارے سکیورٹی اداروں نے 8گھنٹوں کے مسلسل تصادم کے دوران امن امان کو بحال کرنے کا جو مثالی کردار ادا کیا جس کے نتیجے میں کسی قسم کا جانی نقصان نہیں ہوا ۔

اُنہوں نے کہا کہ اس واقعے پر سنی اور اسماعیلی برادری کا ایک پیچ پر ہونا خوش آئند بات ہے جوکہ چترال کے مفاد میں ہے ۔ضلع ناظم نے کہا کہ آئندہ تین سالوں کے اندر ضلع چترال میں زبردست مثبت تبدیلی آنے والی ہے جس سے ناکام بنانے کی سازش کی جا رہی ہے مگر اُن عناصر کے عزائم کو کامیاب نہیں ہونے دی جائے گی۔اُنہوں نے کہا کہ اس واقعے میں ملوث بے قصور گرفتار افراد کو چھوڑ دیا جائے گا۔ضلع ناظم نے واقعے کی ذمہ درانہ میڈیا کوریج پر چترال پریس کلب کے کردار کو سراہا۔اس موقع پر ضلع نائب ناظم مولانا عبدالشکورنے مردان کے واقعے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہاکہ چترال میں علمائے کرام نے مسجد کے اندر ممکنہ خون خرابے کو روک کر یہ ثابت کردی ہے کہ وہ امن پسند ہیں۔

Translate »
error: Content is protected !!