Chitral Times

22nd August 2017

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

صوبے میں پرائیویٹ سکولز ریگولیٹری اتھارٹی ہر صورت بنے گی اور کسی کو غریب عوام کو لوٹنے کی اجازت نہیں دیں گے۔ عاطف خان

May 8, 2017 at 5:59 pm

ً پشاور( چترال ٹائمز رپورٹ ) صوبائی وزیر تعلیم و برقیات محمد عاطف خان نے کہاہے کہ صحافت اور سیاست کا چولی دامن کا ساتھ ہے ۔پرائیویٹ سکولز ریگولیٹری اتھارٹی کے قیام سے غریب والدین کے جیبوں پر ڈاکہ ڈالنے والوں سے نجات ملے گی۔مردان میں جلد انجینئرنگ یونیورسٹی قائم کی جائیگی۔ وہٍ مردان پریس کلب کے عہدیداروں کے تقریب حلف برداری کے موقع پرخطاب کررہے تھے۔تقریب سے سنےئر صحافی مسرت عاصی، صدر ایم بشیر عادل اورجنرل سیکرٹری جمال ہوتی نے بھی خطاب کیا۔تقریب میں ڈیڈک چےئرمین افتخار علی مشوانی، کمشنر مردان ڈویژن ذاکر حسین آفریدی،اسسٹنٹ کمشنر خان محمد اورایس پی انوسٹی گیشن شفیع اللہ خان گنڈاپورکے علاوہ تاجروں،وکلاء اور صحافی برادری کے نمائندوں نے شرکت کی۔ محمد عاطف خان نے کہا کہ صحافیوں کے فلاح و بہبود کے لئے حکومت ٹھوس اقدامات کررہی ہے اور ان کے جائز مسائل کے حل کے لئے اگر قانون سازی کی ضرورت پڑی تو کریں گے۔

انہوں نے صحافیوں پر زور دیا کہ اپنے فرائض منصبی کے دوران معروضیت کو مدنظر رکھے اور بغیر تصدیق کے خبروں کی اشاعت سے گریز کریں۔انہوں نے مردان میں انجینئر نگ یونیورسٹی پشاور کے کیمپس کو مکمل یونیورسٹی کا درجہ دینے کا اعلان کیا اور کہاہے کہ وزیر اعلیٰ نے مردان میں انجینئر نگ یونیورسٹی کے قیام کی منظوری دی ہے۔وزیر تعلیم نے کہا کہ صوبے میں پرائیویٹ سکولز ریگولیٹری اتھارٹی ہر صورت بنے گی اور کسی کو غریب عوام کو لوٹنے کی اجازت نہیں دیں گے۔انہوں نے کہا کہ پرائیویٹ تعلیمی اداروں کے بے لگام اضافے سے معیار تعلیم بری طرح متاثر ہو رہا ہے۔ہم کسی کو جائز کاروبار سے محروم کرنے پر یقین نہیں رکھتے۔تاہم کسی کو مان مانی کی اجازت نہیں دے سکتے جو تعلیمی ادارے اس صوبے میں کام کریں گے انہیں حکومتی رٹ تسلیم کرنی ہوگی۔اتھارٹی پرائیویٹ کی درجہ بندی کرئے گی اور ان کے لئے فیسوں کا تعین ہو گا اور کسی کو اتھارٹی کی منظوری کے بغیر فیسوں میں اضافے کا حق حاصل نہیں ہوگا۔مرضی کی کتاب نہیں چلے گی ۔حکومت کے احکامات کو تسلیم کرنا پڑے گا جو اساتذہ آئی ایم یو کو نہیں مانتے انہیں نوکری چھوڑ دینی چاہےئے۔چل سو چل والا کام نہیں چلے گا۔ناقدین ہماری حکومت کا موازانہ لندن،پیرس اور نیویارک سے کرنے کی بجائے پچھلی حکومتوں یا پاکستان کے دوسرے صوبوں کی حکومتوں سے کریں۔انہوں نے کہا کہ مردان میں کوئی منصوبہ سیاسی بنیادوں پر التواء میں نہیں ڈالا گیا ترقیاتی منصوبے کسی کا احسان نہیں عوام کا حق ہے ۔یہ انہی کے پیسے ہے جو ان پر خرچ کئے جارہے ہیں لیکن جہاں پیسہ لگانا ضروری ہے وہاں یہ دیکھنا چاہےئے کہ یہ پیسہ صفاف اور صحیح طریقے سے لگے قومی دولت عوام کی امانت ہے اور اسکی ایک ایک پائی کو شفاف طریقے سے خرچ کرنے کو یقین بنائیں گے۔محمد عاطف خان نے کہا کہ مردان میں ایک ارب 72کروڑ روپے کی لاگت سے اپ لفٹ منصوبے پر جلد کام کا آغاز ہوگا جس میں مختلف چوکوں کی تزئین و آرائش اور تین فلائی اوورز شامل ہیں۔محمد عاطف خان نے مردان پریس کلب کے لئے پچاس لاکھ روپے گرانٹ ،سولر سسٹم اور پریس کلب میں ایک اور اڈیٹوریم کے قیام کااعلان بھی کیا۔

Translate »
error: Content is protected !!