Chitral Times

23rd August 2017

ﺗﻔﺼﻴﻼﺕ

ناخوشگوارواقعہ چترال کے امن کو خراب کرنے کی ایک سازش ہے جس سے کامیاب ہونے نہیں دیا جائیگا۔کمانڈنٹ 

May 7, 2017 at 11:25 pm

چترال ( نمائندہ چترال ٹائمز ) چترال میں گزشتہ روز رونما ہونے والے ناخوشگوار واقعے کے بعد حالات کو کنٹرول کرنے کیلئے ہفتہ کے روز بھی چترال شہر کے تمام داخلی راستے بدستور بند ہیں۔ کمانڈنٹ چترال ٹاسک فورس کرنل نظام الدین شاہ خود تمام سیکورٹی کی نگرانی کررہے ہیں۔ حالات کو کنٹرول کرنے کیلئے دفعہ 144کا نفاذ کردیا گیاہے ۔ جس پر دوسے زیادہ افراد کو جمع ہونے پر پابندی ہے ۔سیکورٹی فورسز مختلف مقامات پر لوگوں کے شناختی کارڈ چیک کررہے ہیں۔ اور حساس داخلی راستوں کو مکمل طور پر خار دار یں لگا کر بند کردی گئی ہیں۔ دیر پولیس کی بہت بڑی تعداد چترال پہنچ چکی ہے۔ اور چترال میں سیکورٹی زمہ داریاں انجام دی رہی ہیں جبکہ چترال پولیس کی بھاری تعداد جو مردم شماری کی ڈیوٹی پر ضلع سے باہر گئے ہوئے تھے انکو واپس بلا لیا گیا ہے۔ ہفتہ کے روز چترال شہر کے تمام سکولوں کو بند کردیا گیا ہے۔ تاہم امتحانات کو منسوخ نہیں کیا گیا ہے۔ تمام کاروباری مراکز بند ہیں۔ کمانڈنٹ چترال ٹاسک فورس کرنل نظام الدین نے میڈیا سے مختصر بات کرتے ہوئے کہا کہ حالات کنٹرول میں ہیں ۔ اور پریشان ہونے کی کوئی ضرورت نہیں۔ یہ چترال کے امن کو خراب کرنے کی ایک سازش ہے جس سے کامیاب نہیں ہونے دیا جائیگا۔ 

دریں اثنا چترال کی اسماعیلی براداری کے مقامی عمائدین نے چترال میں پیش آنے والے ا نتہائی افسوسناک واقعے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے جس میں ایک شخص توہین رسالت کا مر تکب ہوا ہے، انکی طرف سے جاری ایک پریس ریلیز میں کہا گیا ہے کہ محسنِ انسانیت پیغمبرﷺ پر ایمان اور ان کا احترام تمام اِنسانوں اور بالخصوص مسلمانوں پر فرض ہے ۔  

Translate »
error: Content is protected !!